Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
جمعه 06 دسمبر 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

بھارتی شکست پرسوالات کا سلسلہ جاری

قومی نیوز منگل 02 جولائی 2019
بھارتی شکست پرسوالات کا سلسلہ جاری

لندن … ورلڈ کپ کرکٹ ٹورنامنٹ میں بھارت ،انگلینڈ کے ہاتھوں جس مشکوک انداز میں ہارا اس نے بہت سارے شکوک وشبہات کو جنم لیا ہے۔ سوشل میڈیا پر یہ بحث ہورہی ہے کہ کیا پاکستان کو ٹورنامنٹ سے باہر کرنے کے لئے کوئی سازش تیار کی گئی تھی؟ ایجبسٹن میں بھارتی بیٹنگ نے جس طرح انگلش بولروں کے خلاف پسپائی اختیار کی اس پر کئی سوالات اٹھ رہے ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ پاکستان کو ٹورنامنٹ سے باہر کرنے کے لئے بھارت نے ڈراما رچایا۔ بڑے اسکور کے تعاقب میں بھارت ابتدائی دس اوورزمیں جس طرح بیٹنگ کی اس پر سب حیران ہیں۔ سابق پاکستانی کپتان وقار یونس کا تبصرہ سب سے جاندار ہے جو کئی سوالات کو جنم دیتا ہے۔

وقار یونس کہتے ہیں کہ میری ٹیم سیمی فائنل تک پہنچے یا نہیں، مجھے اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا۔ لیکن کچھ چیمپئنز کی اسپورٹس مین شپ کا ٹیسٹ ہوا جس میں وہ بری ناکام رہے۔ وقار یونس کا کہنا تھا کہ جو آ پ زندگی میں کرتے ہیں، وہ آ پ کو ظاہر کرتا ہے کہ آ پ کیا ہیں۔

شعیب اختر نے بھی بھارت کی ہار پرشکوک ظاہر کئے تھے۔ بھارت کے سابق کپتان سارو گنگولی اور انگلینڈ کے سابق کپتان ناصر حسین بھی بھارت کی بیٹنگ پر خاموش نہ رہ سکے۔ ناصر حسین نے کمنٹری کے دوران کہا کہ سمجھ میں نہیں آ رہا ہے کہ دھونی کیا کر رہے ہیں۔ کم از کم انھیں کوشش تو کرنی چاہیے۔ ساروو گنگولی نے کہا کہ میرے پاس ان سنگلز کا جواز نہیں ہے۔

یہ بھی پڑھیں : پاکستانی بھارتی مداح میچ سے قبل پرجوش

جب آ پ اتنے بڑے ہدف کا تعاقب کررہے ہوں تو اس طرح کی بیٹنگ سمجھ سے بالاتر ہے۔ سابق بھارتی کرکٹر سنجے منجریکر نے کہا کہ اگر کوئی ٹیم بھارتی ٹیم کے اس فتوحات کے تسلسل کو ختم کر سکتی تھی تو وہ انگلینڈ تھی البتہ اختتامی اوورز میں دھونی کی بیٹنگ کا طریقہ کار سمجھ سے بالاتر تھا۔ معروف بھارتی کرکٹ مبصر ہرشا بھوگلے نے بھی میچ کے اس طرح اختتام پر مایوسی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اس طرح اسے آ پ میچ نہیں جیت سکتے۔ ٹاس کے وقت بھارتی کپتان ویرات کوہلی نے کہا تھاکہ آ ج پاکستانی بھی ہماری جیت کے خواہش مند ہیں۔

برمنگھم میں بیٹنگ کے لئے ساز گار پچ پر میزبان ٹیم کے کپتان اوئن مورگن کا ٹاس جیت کر پہلے کھیلنے کا فیصلہ درست رہا۔338رنز کے ہدف کے تعاقب میں بھارتی ٹیم کی شروعات زیادہ متاثر کن نہیں تھی، تیسرے اوور میں کرس ووکس نے لوکیش راول کو صفر پر پویلین بھیج دیا۔

کرس ووکس نے پہلے پانچ اوورز میں تین میڈن کروائے، اگلے دس اوورز میں بھی بھارتی ٹیم نے تیز رفتاری سے رنز بٹورنے کی کوشش نہیں کی۔ بھارت کی انگلینڈ کے ہاتھوں 31رنز کی شکست پر شکوک وشبہات اپنی جگہ البتہ حقیقت یہ ہے کہ بھارت کی شکست کے باوجود اس کی سیمی فائنل کھیلنے کی امیدوں کو کوئی نقصان نہیں پہنچا ہے، کیوں کہ ٹورنامنٹ میں گیارہ پوائنٹ رکھنے والی کوہلی الیون کو اگلے دو میچوں میں بنگلہ دیش اور سری لنکا میں سے کسی ایک کو ہرانا ہوگا۔

ماضی کے آ ل رائونڈر عبدالرزاق کا کہنا ہے کہ میں نہیں سوچ سکتا کہ اس طرح کھیلوں۔ بھارت کی باڈی لینگویج سب سے سامنے ہے۔ اس بارے میں سابق کرکٹرز بات تو کررہے ہیں لیکن کھل کر اظہار خیال کرنے سے گریز کرنا چاہیے۔ میچ میں کافی چیزیں نارمل نہیں تھیں۔ آ ئی سی سی کو اس بارے میں ضرور دیکھنا چاہیے۔ سابق کرکٹر محمد یوسف کہتے ہیں کہ اس سے پہلے بھی ایسی چیزیں ہوتی رہی ہیں لیکن کسی کے پاس کوئی ثبوت نہیں ہے لیکن بظاہر چیزیں ٹھیک نہیں لگ رہی۔ اس بارے میں سنجیدگی سے معاملات کو دیکھنا چاہیے۔

(643 بار دیکھا گیا)

تبصرے