Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
پیر 16  ستمبر 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

آئی ایم ایف نے ایمنسٹی اسکیم کی مخالفت کر دی

ویب ڈیسک هفته 29 جون 2019
آئی ایم ایف نے ایمنسٹی اسکیم کی مخالفت کر دی

اسلام آباد …… حکومت کو ایمنسٹی اسکیم میں توسیع کیلئے نیا آرڈیننس لانا پڑے گا۔تاہم آئی ایم ایف نے ایمنسٹی اسکیم کی مخالفت کر دی اور کہا ہے کہ ایمنسٹی دیانتدار ٹیکس گزاروں کے ساتھ زیادتی اور معیشت کیلئے بہتر نہیں ہوتی۔

جمعہ کو قومی اسمبلی میں فنانس بل کے ذریعہ ایسیسٹ ڈیکلیئریشن اسکیم 2019ء کی منظوری کے ساتھ مذکورہ اسکیم میں توسیع کیلئے حکومت کو ایک اور آرڈیننس جاری کرنا پڑے گا۔ ٹیکس ایمنسٹی اسکیم کی مدت 30 جون کو مکمل ہو رہی ہے۔

تاہم آئی ایم ایف نے اصولی طور پر اس اسکیم کی مخالفت کی ہے۔ رابطہ کرنے پر ا?ئی ایم ایف کی ریذیڈنٹ چیف ٹیریسا ڈبن سانچیز نے بتایا کہ عالمی مالیاتی ادارہ ٹیکس ایمنسٹیز دینے کے حق میں نہیں ہے۔

ایرانی تیل پرامریکی پابندی ،بڑا بحران شروع

رابطہ کرنے پر ترجمان ایف بی ا?ر اور ممبر اِن لینڈ ریونیو ڈاکٹر حامد عتیق سرور نے کہا کہ اسکیم کی پارلیمنٹ نے منظوری دے دی ہے جبکہ ذرائع کا کہنا ہے کہ اسکیم میں توسیع کیلئے حکومت کو نیا ا?رڈیننس جاری کرنا پڑے گا کیونکہ صدر مملکت کی جانب سے دستخط کے بعد فنانس بل قانون بن جائے گا۔ حکام کا کہنا ہے کہ پی ایس ا?ئی ڈی کے تحت 10 ارب روپے جمع کرائے گئے ہیں جبکہ ٹیکس ایمنسٹی اسکیم کے تحت 30 ارب سے 35 ارب روپے کی وصولیاں متوقع ہوں گی۔

ٹیکس دہندگان نے ٹیکس ایمنسٹی کے 40 ہزار فارمز ڈائون لوڈ کئے لیکن وہ نہیں جانتے کہ اس سے کیسے استفادہ کیا جائے۔ ایک اعلیٰ افسر نے یاد دلایا کہ گزشتہ ٹیکس ایمنسٹی اسکیم کے تحت جون 2018ء￿ میں 25 ارب سے 30 ارب روپے تک کی وصولیاں متوقع تھیں لیکن اس وقت 90 ارب روپے تک وصولیاں ہوئیں۔ اب ایف بی ا?ر کو جاری اسکیم سے مثبت توقعات نہیں، تاہم سینئر حکام کا کہنا ہے کہ 30 جون 2019ء￿ تک رواں اسکیم سے 30 ارب سے 40 ارب روپے تک حاصل ہو سکتے ہیں۔

(2123 بار دیکھا گیا)

تبصرے