Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
پیر 22 جولائی 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

گریڈ 17 تا 22 کے افسران کی تنخواہ کم ہو جائیگی

ویب ڈیسک جمعه 14 جون 2019
گریڈ 17 تا 22  کے افسران کی تنخواہ کم ہو جائیگی

اسلام آ باد … پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آ ئی) کی حکومت کی جانب سے پیش کیے جانے والے آ ئندہ مالی سال کے بجٹ کی وجہ سے ملکی تاریخ میں پہلی مرتبہ عملاً یکم جولائی 2019ء سے گریڈ 17 سے 22 تک کے سویلین اور ملٹری افسران کی تمام کٹوتیوں کے بعد ملنے والی تنخواہ (ٹیک ہوم سیلری) کم ہو جائے گی۔

وزارت خزانہ کے ذرائع کا کہنا ہے کہ بجٹ میں حکومت کی جانب سے گریڈ 17 تا 22 کے افسران کی تنخواہوں میں فیصد اضافے کے اعلان کے باوجود تنخواہ دار طبقے کیلئے ٹیکس سلیب 12 لاکھ روپے سالانہ سے کم کرکے 6 لاکھ روپے کرنے کے نتیجے میں ان کی تمام کٹوتیوں کے بعد ملنے والی تنخواہ (ٹیک ہوم سیلری) کم ہو جائے گی۔

یہ بھی پڑھیں : اب مہارانی کے باپ کی حکومت نہیں

ان ذرائع کا کہنا ہے کہ ٹیکس سلیب کو 12 لاکھ سالانہ آ مدنی سے کم کرکے 6 لاکھ روپے کرنے سے نہ صرف گریڈ 17 تا 22 کیلئے اعلان کردہ 5 فیصد اضافے کا کوئی فائدہ نہیں ہوگا بلکہ ان کی موجودہ تنخواہ پر بھی منفی اثرات مرتب ہوں گے۔ 21 اور 22 گریڈ کے افسران کی تنخواہوں میں کوئی اضافہ نہیں کیا گیا لیکن ان کی تنخواہ میں کٹوتی ہوگی کیونکہ ان کی تنخواہوں سے اضافی ٹیکس وصول کیا جائے گا۔

ایک ذریعے کے مطابق، گریڈ 17 تا 22 کے افسران کی تنخواہوں میں کٹوتی 1500 سے 12 ہزار روپے تک ہوگی لیکن ایک سینئر ٹیکس عہدیدار کے حساب کو دیکھ کر معلوم ہوتا ہے کہ تنخواہ میں اس سے زیادہ کمی واقع ہو سکتی ہے۔

وزارت خزانہ کے ایک عہدیدار نے ایک جدول دکھائی جس میں 30 جون 2019ء تک تمام کٹوتیوں کے بعد گریڈ 18 کے ایک افسر کو ملنے والی تنخواہ اور 31 جولائی 2019ء کو ملنے والی تنخواہ کا فرق دکھایا گیا تھا۔ اس جدول کو دیکھ کر معلوم ہوتا ہے کہ جون 2019ء میں گریڈ 18 کے جس افسر کی تنخواہ ایک لاکھ 52 ہزار 869 روپے تھی وہ جولائی 2019 میں کم ہو کر ایک لاکھ 51 ہزار 100 روپے ہو جائے گی۔

یعنی اس میں تقریباً 1800 روپے کی کمی واقع ہوگی۔ وزارت خزانہ کے ذریعے نے کہا کہ گریڈ 17 تا 22 کے ملازمین کی تنخواہوں پر پڑنے والے اثرات 1500 سے 12 ہزار روپے تک ہوں گے۔

تاہم، انکم ٹیکس ڈپارٹمنٹ سے تعلق رکھنے والے گریڈ 20 کے ایک افسر نے اس نمائندے کو بتایا کہ ان کے حساب کے مطابق ٹیکس سلیب میں کمی کی وجہ سے ان کی ماہانہ تنخواہ میں 16 ہزار 937 روپے کمی ہوگی جبکہ سالانہ حساب لگائیں تو مجموعی طور پر 2 لاکھ 3 ہزار 248 روپے کی کٹوتی ہوگی۔

یہ بھی پڑھیں : محمد عامر کو کھیلنا مشکل تھا، ڈیوڈ وارنرکا اعتراف

گریڈ 21 اور 22 کے افسران کے معاملے میں دیکھیں تو ان کی تنخواہوں میں بھاری کٹوتی ہوگی کیونکہ ان کیلئے بجٹ میں تنخواہ میں اضافے کا اعلان نہیں کیا گیا۔ انکم افسر کے حساب کے مطابق، گریڈ 17 سے 22 کے افسران کی تنخواہوں میں کمی کے اثرات وزارت خزانہ کے ذریعے کی جانب اس نمائندے کو بتائے گئے اثرات سے زیادہ ہوں گے۔

گریڈ 20 کے افسر کی موجودہ تنخواہ اور آ ئندہ مالی سال سے ملنے والی تنخواہ کے تقابل کی جدول دیکھیں تو آ ئندہ مالی سے اس افسر کو بجٹ میں اعلانیہ ایڈہاک ریلیف کی مد میں 5 ہزار 33 روپے ملیں گے لیکن فی الوقت کٹنے والا 4 ہزار 956 روپے کا انکم ٹیکس جولائی 2019ء میں بڑھ کر ماہانہ 26 ہزار 926 روپے ہو جائے گا۔

2019-20ء کے بجٹ میں گریڈ ایک تا 16 کے سویلین اور ملٹری ملازمین کیلئے 10 فیصد جبکہ گریڈ 17 تا 20 کیلئے 5 فیصد ایڈہاک ریلیف الائونس کا اعلان کیا گیا ہے۔

(1286 بار دیکھا گیا)

تبصرے