Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
هفته 25 مئی 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

ذخیرہ اندوزسرگرم، مصنوعی مہنگائی کا سیلاب

ویب ڈیسک اتوار 05 مئی 2019
ذخیرہ اندوزسرگرم، مصنوعی مہنگائی کا سیلاب

کراچی … ماہ رمضان المبارک کی آمد سے قبل ہی ذخیرہ اندوزوں نے مصنوعی مہنگائی کا سیلاب برپا کردیا ہے ، مشروبات، گرم مصالحہ جات، بیسن کا آٹا، تیل گھی کی قیمتوں میں 60 فیصد اضافہ ہوگیا ،پھلوں اور سبزیوں کے نرخ بھی 70 فیصد تک بڑھ گئے تفصیلات کے مطابق ماہ رمضان آنے سے قبل اشیاء خورد نوش کی قیمتیں 50 سے 60 فیصد تک بڑھ گئی ہیں

مارکیٹ ذرائع کا کہنا ہے کہ جن مشروبات کی جو قیمتیں گزشتہ سال 160 یا 170 روپے تھی اس کی قیمت بڑھ کر 220 روپے ہوگئی ہے جبکہ گرم مصالحہ جات کی قیمت 240 روپے سے بڑھ کر 500 روپے کلو تک پہنچ گئی گزشتہ سال چاٹ مصالہ جو 90روپے میں دستیاب تھا اس کی قیمت 160 روپے تک پہنچ گئی ہے جبکہ بیسن کی قیمت 120 روپے سے بڑھ کر 180 روپے ہوگئی ہے

ماہ رمضان میں استعمال ہونے والی دیگر اشیاء کے ساتھ گھی اور تیل کی قیمتوں میں بھی اضافہ کیا جارہا ہے کمرشل طورپر امپورٹ کیے گئے کھلا تیل اور گھی کی قیمت 130 روپے سے بڑھ کر 170 روپے فی کلو تک ہوگئی ہے جبکہ کھانے کے لئے استعمال ہونے والے گئی اور تیل کی قیمت 160 روپے سے بڑھ کر 200 روپے ہوگیا

کھجور کی قیمتیں آسمان سے باتیں کرنے لگ گئی ہیں گزشتہ سال جوکھجور 240کلو میں دستیاب تھی وہ بڑھ کر300 روپے ہو گئی ہے جبکہ ماہ رمضان میں سب سے زیادہ استعمال ہونے والی اشیاء سمبوسہ اور رول کی قیمت 12 روپے سے بڑھ کر 15 سے 20روپے ہوگئی ہے جبکہ دیگر آیٹموں کے ساتھ کزشتہ ایک سال کے دوران گوشت کی قیمت میں بھی اضافہ ہوگیا ہے

یہ بھی پڑھیں :

مرغی گوشت کی قیمت گزشتہ سال 220 تھی اب 320 روپے ہوگئی ہے گائے کے گوشت کی قیمت 440 روپے سے بڑھ کر 480 روپے ہوگئے جبکہ بکرے کا گوشت آٹھ سو روپے سے بڑھ کر 950 روپے کلو ہوگیا ہے ماہ رمضان میں استعمال ہونے کھانے پینے کی دیگر اشیاء کے ساتھ فروٹ اور سبزیوں کے نرخوں میں بھی اضافہ ریکارڈ کیا جا رہا ہے

گزشتہ ایک ہفتے کے دوران منافع خوروں نے فروٹ کے ریٹ میں 70 فیصد تک اضافہ کردیا ہے سیب کی قیمت گزشتہ ایک ہفتے کے دوران 70 روپے کلو سے بڑھ کر 120 روپے کلو ہوگئی ہے جبکہ گولڈن سیب 200 روپے کی قیمت 350 روپے ہوگیاہے کیلے کے نرخ 60 روپے درجن سے بڑھ کر 120 روپے درجن ہوگیا ہے

تربوز 30 روپے سے 60 روپے اور خربوزہ 70 روپے کلو سے بڑھ کر 120 کلو ہوگیا ہے اسطرح سبزی کے نرخ بھی برھ گئے ہیں اس حوالے سے سیریل ایسوسی ایشن آف پاکستان کے چیئرمین اور جوڑیا بازار کے تاجر رہنماء مزمل چیپل نے بات چیت کرتے ہوئے بتا کہ حکومت سرکاری نرخوں کو کنٹرول کرنے میں ناکام نظر آہی ہے

جس کے اثرات غریب عوام پر پڑ رہے ہیں انہوں نے کہا کہ انتظامیہ پرائز کنٹرول کے نظام میں طاقت کے بجائے تاجروں سے مشاورات کے بعد نرخوں کو طے کرے

(1070 بار دیکھا گیا)

تبصرے