Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
هفته 24  اگست 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

عالمی بینک نے مزید مہنگائی ہونے کی خبر سنادی

ویب ڈیسک پیر 08 اپریل 2019
عالمی بینک نے مزید مہنگائی ہونے کی خبر سنادی

اسلاآباد…پاکستانی معیشت 2سال خراب رہے گی،پیداوار کم، مہنگائی اور قرضوں کا بوجھ بڑھے گا ‘عالمی بینک نے ایشیائی بینک سے بھی زیادہ خراب صورتحال کی پیشگوئی کردی ہے۔

عالمی بینک نے جنوبی ایشیا سے متعلق اپنی علاقائی رپورٹ بعنوان ’’ایکسپورٹ وانٹڈ‘‘ میں کہا ہے کہ مالی سال 2019 میں پاکستان کی اقتصادی ترقی کی شرح 3.4اور مالی سال 2020 میں 2.7فیصد رہنے کی توقع‘ہنگامی اصلاحات نافذ کی جائیں تو 2021 تک پاکستانی معیشت کی شرح نمو 4 فیصدہو سکتی ہے۔

جب کہ عالمی بینک کے کنٹری ڈائریکٹر برائے پاکستان الانگو پچاموتھو کا کہنا ہے کہ پاکستان کے لئے ضابطہ جاتی ماحول کو بہتر بنانا اور تجارت میں آسانیوں کو قائم کرنا ممکن ہے تاہم، مواصلات کے محاذ پر بھی اصلاحات ضروری ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : وی آئی پی پروٹوکول اے آئی جی سی ٹی ڈی

عالمی بینک نے پاکستان کی معیشت کی تشویشناک اور مایوس کن منظر کشی کی ہے اور کہا ہے کہ آئندہ دو برس میں شرح ترقی سست روی کا شکار رہے گی ،جب کہ مہنگائی کے ساتھ ساتھ قرضوں کا بوجھ بھی بڑھے گا۔

عالمی بینک کے مطابق، مالی سال 2019میں جی ڈی پی کا خودمختار قرض 80فیصد سے زائد ہوسکتا ہے اور آئندہ دو برس تک مستحکم رہنے کیلیے قرضوں سے متعلق صدموں کے لیے پاکستان کے اکتشاف میں اضافہ کرنا ہوگا۔

عالمی بینک نے جنوبی ایشیا سے متعلق اپنی علاقائی رپورٹ بعنوان ’’ایکسپورٹ وانٹڈ‘‘اتوار کو شائع کی ، جس میں کہا گیا ہے کہ مالی سال 2019اور مالی سال 2020میں غربت میں کمی کی رفتار میں سست روی برقرار رہے گی،جس کے بعد ترقی سست روی کا شکار ہوگی اور مہنگائی کی شرح میں اضافہ ہوگا۔

یہ بھی پڑھیں : آئندہ ہفتے نئے بھارتی حملے کا خطرہ فورسز ہائی الرٹ

رپورٹ میں مالی سال 2019میں اقتصادی ترقی کی شرح 3.4اور مالی سال 2020میں 2.7فیصد رہنے کی پیش گوئی کی گئی ہے کیوں کہ حکومت نے مالیاتی اور زری پالیسی میں سختی کی ہے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ اندرونی طلب میں کمی آئے گی جبکہ برا?مدات میں مرحلہ وار اضافہ ہو گا۔

عالمی بینک نے کہا ہے کہ اگر پاکستان میں ہنگامی اصلاحات نافظ کی جائیں تو 2021 تک پاکستانی معیشت کی شرح نمو 4 فیصد تک بڑھ سکتی ہے۔ا س صورت حال سے اندازہ ہوتا ہے کہ عالمی سطح پر تیل کی قیمتوں میں استحکام رہے گا ، جب کہ سیاسی اور سیکورٹی خدشات میں کمی آئے گی۔

رپورٹ میں مزید بتایا گیا کہ فروری میںپاکستان میں مہنگائی کی شرح 8.2 فیصد رہی جو دسمبر 2018 میں 6.1 فیصد تھی۔

پاکستان میں مہنگائی کی شرح میں اضافہ جبکہ بھارت اور سری لنکا میں کمی ہوئی،جنوبی ایشیاء میں دیگر ممالک کے مقابلے میں پاکستان میں اشیائے خورونوش کی قیمتوں میں اضافہ ہوا ، رواں برس پاکستان کے مالیاتی اور تجارتی کھاتوں کاخسارے بڑھنے کا امکان ہے۔

(279 بار دیکھا گیا)

تبصرے