Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
منگل 20  اگست 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

فنکاروں کے لئے اعزازات

ویب ڈیسک جمعرات 21 مارچ 2019
فنکاروں کے لئے اعزازات

صدر پاکستان نے کچھ روز قبل پاکستانی اور غیر ملکی شخصیات کو سول ایوارڈ دینے کی منظوری دی ہے۔ سول ایوارڈ دینے کی منظوری دی ہے‘ سول ایوارڈز دینے کی تقریب 23 مارچ کو یوم پاکستان کے موقع پر ہوگی‘ جس میں 127 شخصیات کو مختلف کیٹیگریز میں ایوارڈز دیئے جائیں گے ‘ عوامی خدمات کے شعبے میں شعیب سلطان خان کو نشان امتیاز سے نواز ا جائے گا‘ جبکہ کھیلوں کے شعبہ میں سابق فاسٹ بائولر وسیم اکرم اور وقار یونس کو ہلال امتیاز دسے نواز ا جائے گا‘ شہید نواب زادہ میرسراج رئیسانی اور محمد ادریس شہید کیلئے ستارئہ شجاعت کا اعلان کیا گیاہے‘ پاکستان کیلئے خدمات پر تین غیر ملکیوں کیلئے بھی ہلال پاکستان کا اعلان کیا گیا‘ جن میں جاپان کے سی شیرو ایتو ‘ چین کے ژو شاہوشی اور ترکی کے اسماعیل خرامانی شامل ہیں‘ کھیل کے شعبے میں یاسر شاہ جبکہ موسیقی کیلئے عطاء اللہ خان عیسیٰ خیلوی اور سجا د علی کیلئے ستارئہ امتیاز کا اعلان کیا گیا‘ اداکاری کے شعبہ میں بابرہ شریف کو ستارئہ امتیاز جبکہ اداکار شبیر جان ‘ افتخار ٹھاکر اور ریما خان کو صدارتی ایوارڈ برائے حسن کارکردگی دیا جائے گا‘ اداکاری کے شعبہ میں مہوش حیات جبکہ موسیقی میں سردار علی ٹکر کو تمغہ امتیاز سے نوازا جائے گا

سول ایوارڈ میں بہترین خدمات کے مطابق رواں سال فلم انڈسٹری میں بہترین خدمات کے اعتراف میں معروف فلم اداکارہ ریما خان کو پرائڈ آف پرفارمنس دیا جارہاہے‘ ریمان خان پاکستان کی 90 ء کی دہائی کی نامور اداکارہ ہیں‘ انہوںنے بہت سی فلموں میں کام کیا اور ان کی کئی فلمیں باکس آفس میں بلاک بسٹر ثابت ہوئیں‘ انہوںنے پروڈکشن کے شعبے میں بھی گراں قدر خدمات انجام دیں‘ ان کی فلم ’’لو میں گم‘‘ نے بہت شہرت سمیٹی ‘ بعد ازاں انہوںنے امریکہ میں مقیم پاکستانی ڈاکٹرز سے شادی کرلی‘ وہ آج کل بھی پاکستان میں ہیں‘ گزشتہ دنوں انہوںنے پاک بھارت جنگ کے حوالے سے حب الوطنی کا نعرہ لگایا‘ ریما خان نے کالم نگاری بھی کی‘ انہوںنے صرف روز نامہ خبریں کیلئے کالم لکھے‘ جو باقاعدگی سے شائع ہوتے تھے‘ بابرہ شریف کو ستارہ امتیاز بھی ان کی اراکارانہ صلاحیتوں کو دیکھتے ہوئے دیا جارہا ہے‘ انہوںنے ٹی وی ڈراموں سے اداکاری کا آغاز 70 کی دہائی میں کیا‘ بہترین اداکاری پر انہیں فلموں میں کام کرنے کی پیشکش ہوئی‘ ان کی پہلی فلم ’’انتظار‘‘ تھی‘ اس کے بعد بابرہ شریف کو یکے بعد دیگرے فلمیں ملنے لگیں‘ ان کی سبھی فلمیں کامیاب رہیں‘ تاہم بابرہ شریف کی اصل وجہ شہرت ان کی فلم ’’میرا نام ہے محبت‘‘ بنی ۔ انہوںنے شاہد ‘ محمد علی‘ وحید مراد اور ندیم جیسے مشہور اداکاروںکے ساتھ کام کیا‘ بابرہ شریف کی اداکاری کے چرچے آج بھی ہیں‘ ماضی کی فلموں میں شاندار اداکاری پر انہیں کئی بڑے ایوارڈز بھی مل چکے ہیں

بابرہ شریف پاکستان فلم انڈسٹری سمیت شوبزکا ایک بڑا نام ہیں‘ وہ اپنے منفرد انداز کے باعث آج بھی شہرت رکھتے ہیں‘ ان کے ڈرامے بہت مقبول ہوئے‘ بابرہ نے کامیڈی ڈرامہ ’’نادان نادیہ‘‘ میں بھی کام کیا‘ جس میں ان کا مرکزی کردارتھا‘ جس سے ان کی ٹی وی ناظرین میں بھی مقبولیت کو چار چاند لگے‘ آج کل بابرہ شریف کام نہیں کر رہیں‘ موسیقی کی دنیا میں عمدہ اور منفرد گلوکاری کی صلاحیتوں کے حامل گلوکار عطاء اللہ عیسیٰ خیلوی کو ستارئہ امتیاز مل رہا ہے‘ ان کی گلوکاری کیلئے خدمات کاعرصہ 40 برس ہے‘ ایک وقت تھا‘ جب وہ ریڈیو پر آڈیشن کیلئے آئے ناکام ہوگئے تھے‘ پھر فیصل آباد کے کیسٹ ہائوس رحمت گراموں فون والوں نے ان کا پہلا کیسٹ کا والیم ریلیز کیااور ان کو اتنی شہرت ملی کہ ہر جگہ اور ہرگاڑی میں سنے جانے لگے‘ اب ان کا بیٹا سانول بھی گاتا ہے‘ ان کی بیٹی امریکہ میں اداکاری کرتی ہیں اور ان کی بیوی باز یہ بھی شادی سے پہلے اداکاری کرتی رہی ہیں‘ عطاء اللہ عیسیٰ خیلوی کو یہ اعزاز بھی حاصل ہے کہ وہ عمران خان کی انتخابی مہم کیلئے گیت بھی گا چکے ہیں‘ ’’بنے گا نیا پاکستان‘‘ پی ٹی آئی کے انتخابی جلسوں میں گونجتا رہا ہے‘ انہیں حکومت کی طرف سے سراہا جانا ایک اچھا شگون ہے‘ گلوکا ر سجاد علی کو بھی ستارئہ امتیاز سے نواز جارہاہے‘ وہ سینئر گلوکار ہیںاور ان کا گلوکار گھرانے سے تعلق ہے‘ وہ 24 اگست 1966 ء کو لاہو رمیں پیدا ہوئے تھے‘ ان کے بہت سے گیت معروف ہوئے‘ 1993 ء میں ان کی ایک گیتوں کی آڈیو کیسٹ ’’بے بیا‘‘ نے نوجوان نسل میں بہت مقبولیت حاصل کی تھی‘ جس میں اداکارہ نیلی کوبھی انہوںنے ٹریبیوٹ پیش کیاتھا

سجاد علی کے کریڈٹ پر بہت سی غزلیں بھی ہیں‘ جن میں ایک کے بول ’’اے وعدہ فراموش میں تجھ سا تو نہیں ہوں‘‘ بھی بہت مقبول ہوئی‘ چھوٹی اسکرین کے مقبول اداکار شبیر جان کو بھی پرائڈ آف پرفارمنس سے نواز جارہاہے‘ شبیر جان ٹی وی کے جانے مانے اور منجھے ہوئے اداکارہیں‘ شبیر جان نے کئی لالی وڈ فلموں میں اداکاری بھی کی اور ان کا شمار پاکستان کے سینئر اداکاروں میں ہوتاہے ‘ اس کے علاوہ انہوںنے بے شمار ٹی وی ڈراموں میں اداکاری کی‘ جن میں ’’مکان‘ ان داتا‘ زندگی‘ دھوپ تم گھنا سایہ‘امرائو جان ‘ جانگلوں اور شب غلام‘‘ وغیرہ شامل ہیں‘ کامیڈین افتخار ٹھاکرکو بھی ایوارڈ سے نوازا جانا خوشی کی بات ہے‘ ان سے پہلے بہت سے کامیڈین رخصت ہوئے جن میں معین اختر کے فن کو سراہا گیا‘ اس وقت پنجاب میں نسیم وکی بھی عمدہ مزاح تخلیق کررہے ہیں‘ لیکن ان کا ستارہ ابھی ایوارڈ کی مد میں نہیں چمک پایا‘ کرندانوں لاہور میں کمرشل تھیٹر اور ایک نجی ٹی وی پر مزاحیہ شوبھی کرتے ہیں‘ معروف فلمی مصنف اور شہرئہ آفاق فلم ’’مولا جٹ ‘ ‘ کے اسکرین رائٹر ناصر ادیب کو بھی پرائڈ آف پرفارمنس ایوارڈز سے نوازا جائے گا‘ انہوںنے 412 سے زائد فلموںکے اسکرپٹ لکھے ہیں

جن میں ’’مولا جٹ ‘ شبیر جان آج کی لڑکی اور بھارتی فلمیں ’’ گھائل ‘‘ وغیرہ شامل ہیں‘ انہوںنے اپنے فنی کیریئر کا آغاز ریڈیو سے کیا پھر فلم کی طرف آئے اور 10 سال تک پروڈکشن ہائوسز کے چکر لگاتے رہے‘ تاہم پھر ان کی پسمت کا ستارہ چمکا اور ایک دور آیا کہ ہر دوسری فلم کے مصنف ناصر ادیب ہی ہوا کرتے تھے‘ انہوںنے بہت دیر کے بعد پھر فلم مولا جٹ ہی کے تسلسل میں ’’لیجنڈ آف مولا جٹ ‘‘ لکھی ہے‘ جو مکمل ہوچکی ہے اور امید ہے کہ عید الفطر پر سینما گھروں کی زینت بنے گی‘ اب بات کرتے ہیںکہ نامور اور خوبصورت اداکارہ مہوش حیات کی جنہیں ستارئہ امتیاز سے نوازا جائے گا‘ انہوںنے اعلان سننے کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مجھے یہ خبر سن کر بے حد خوشی ہوئی کہ صدر پاکستان نے مجھے یہ اعزاز دینے کا فیصلہ کیاہے‘ میں ہمیشہ سے اپنا شوق پورا کررہی ہوںاور اس پر اس طرح سے اعزاز ملنے کا یہی مطلب ہے کہ میں کچھ اچھا ہی کررہی ہوںاور یہاں کی انٹر ٹینمنٹ انڈسٹری کو بہتر بنانے پر فوکس کروں گی اور مجھے اپنی شرکت پر فخر ہے

گزشتہ 5 سالوں میں پاکستان کی کئی کامیاب اور بہترین فلموں کا حصہ بنی ہوں‘ اداکارہ نے اس اعزاز کیلئے اپنے ان دوستوںکا بھی شکریہ ادا کیا‘ جن کے بغیر وہ یہ مقام حاصل کرنے میں ناکام ہوجاتیں‘ مہوش حیات کا کہنا تھا کہ ’’لیکن میں اس کا پورا کریڈٹ خود نہیں لوں گی‘ جب 23 مارچ کو میں یہ اعزاز قبول کروں گی‘ تو اسے ان تمام ہدایت کا ر‘ ساتھی اداکار‘ مصنف ‘ میک اپ عملے اورٹیم میں موجود ہر فرد سے شیئر کروںگی‘ جو میری کامیابی کا حصہ بنا‘ مہوش حیات کو تمغہ امتیاز ملنے پر شوبز انڈسٹری سے وابستہ افراد میں سے کچھ نے حیرانی کا اظہار کیاہے‘ ان کا کہنا ہے کہ آخر بے شمار فنکاروں کو نظر انداز کرکے ایک جونیئر اداکارہ کو تمغہ امتیاز دیا جانا کیا معنی رکھتا ہے‘ یہ امر قابل ذکر ہے کہ کراچی او رلاہور سے تعلق رکھنے والے بہت سے ایسے فنکار جو 50 ‘ 50 سال سے اس انڈسٹری میں کام کررہے ہیں‘ انہیں آج تک کوئی سول ایوارڈ نہیںدیا گیا ‘ سوشل میڈیا صارفین کا یہ بھی کہنا ہے کہ ایک جونیئر اداکارہ کو یہ ایوارڈز دے کر ایک نئی تاریخ رقم کی گئی ہے‘ دوسری طرف سوشل میڈیا پر یہ سوال اٹھایا جارہاہے کہ آخر مہوش حیات نے ایسی کون سی خدمات سرانجام دی ہیں‘ جن کیلئے تمغہ امتیاز دینے کا اعلان کیا گیاہے‘ سوشل میڈیا پر دل جلے اپنے دل کی بھڑاس نکال رہے ہیں‘ کچھ نے پرچی کا کمال قرار دیا‘ جبکہ کچھ نے اس کا کریڈٹ مہوش حیات کے کام کو دیاہے۔

(312 بار دیکھا گیا)

تبصرے