Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
جمعه 18 اکتوبر 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

سوشل میڈیا پر گھمسان کی لڑائی

قومی نیوز هفته 02 مارچ 2019
سوشل میڈیا پر گھمسان کی لڑائی

گزشتہ چند دنوں سے پاک بھارت کشیدگی ٹوئیٹر پر اہم ترین موضوع بنی ہوئی ہے اور سرحد کے دونوں جانب بلکہ دنیا بھر میں اس بارے میں لاکھوں ٹوئیٹس کیے جا چکے ہیں۔بھارتی لڑاکا طیاروں نے پاکستانی فضائی حدود کی خلاف ورزی کی۔ اس کے بعد سوشل میڈیا پر جو طوفان اٹھا، وہ ابھی تک نہیں بیٹھا بلکہ پاکستان کی جوابی کارروائی کے بعد اس میں شدت آئی ہے۔ فرق صرف یہ پڑا کہ کل صرف جنگ کے نعرے لگ رہے تھے اور آج امن کو موقع دینے کی آوازیں بھی بلند ہو رہی ہیں۔ بھارت میں ٹاپ ٹرینڈز انڈیا اسٹرائیکس پاکستان، ایئر سرجیکل اسٹرائیکس، سلیوٹ ٹو انڈین ایئر فورس اور جوش از ہائی تھے۔دوسرے دن پاکستان اور بھارت، دونوں ملکوں میں ٹوئیٹر کا ٹاپ ٹرینڈ ’’ابھی نندن‘‘ بنا رہا۔

یہ اس بھارتی پائلٹ کا نام ہے جس کا طیارہ پاکستانی حدود میں گرا اور اسے گرفتار کر لیا گیا۔اس کے علاوہ جو ہیش ٹیگ ٹرینڈ کر رہے ہیں ان میں برنِگ بیک ابھی نندن، جنیوا کنونشن اور سے نو ٹو وار یعنی جنگ کا انکار کرو شامل ہیں۔ اس پر ایک پاکستانی نے ٹویٹر پر تبصرہ کیا، ایک ہی دن میں جوش جھاگ بن کر بیٹھ گیا؟ پاکستان میں ٹاپ ٹرینڈ انڈیا فیلڈ اسٹرائیک، گیٹ ریڈی فور سرپرائز اور پاکستان سوپر لیگ تھے۔ پاکستان کی کارروائی کے بعد ٹاپ ٹرینڈز میں پاکستان اسٹرائیکس بیک، ابھی نندن اور پاکستان سوپر لیگ شامل ہیں۔

یعنی پاکستان میں جنگ سے متعلق تشویش تو ہے لیکن پاکستانیوں کی توجہ سوپر لیگ سے ہٹ نہیں رہی۔بھارت میں پاکستان کے خلاف کافی غم و غصے اور جھنجلاہٹ کا اظہار کیا جارہا ہے لیکن پاکستان میں جنگ سے متعلق میمز بنائی جا رہی ہیں۔ ایک عرب نے اس بارے میں لکھا، یہ دنیا کی پہلی لڑائی ہے جس میں ایک فریق دھمکیاں دے رہا ہے اور دوسرا جگتیں لگا رہا ہے۔ بھارت میں للت موہن یادیو نے عمران خان کی تصویر کے ساتھ ٹویٹ کیا تھا، میری فوج کے ساتھ مت الجھنا، ورنہ۔۔۔ وہ ہتھیار ڈال دے گی۔پاکستان میں ایک منچلے نے ٹوئیٹر پر ابھی نندن کا اکاؤنٹ بنا ڈالا اور ٹوئیٹ کیا، بھائی مست جگہ ہے۔ ٹپال کی چائے پی ہے ابھی فل مست۔ رات کو کڑاہی کا پلان کر رہا ہوں۔ اور سب سے اچھی بات، یہاں باتھ روم ہے۔ میں واپس نہیں جا رہا۔

دونوں ملکوں کی جنگی طاقت سے متعلق ایک گراف بھی گردش میں ہے جس میں فوجیوں، ٹینکوں اور لڑاکا طیاروں کی تعداد درج ہے۔ کسی نے انڈیا کے طیاروں کی تعداد 679 کو کاٹ کر 677 لکھ دیا ہے۔کسی نے عامر خان کی مشہور فلم تارے زمین پر کا پوسٹر ایڈٹ کردیا اور اب اس پر لکھا ہے، طیارے زمین پر!شیخ رشید نے اپنے فالوور رحمان حمید کو ری ٹوئیٹ کیا جنھوں نے لکھا کہ کل انڈیا نے لائن کراس کر کے نو بال کی تھی۔ آج پاکستان نے فری ہٹ پر چھکا دے مارا۔ پاکستان کے بھارت کو بھرپور اور موثر جواب کے بعد سوشل میڈیا پر تباہ شدہ بھارتی طیاروں کی تصاویر تیزی سے وائرل اور ‘ پاکستان آرمی زندہ باد’، ‘ پاکستان اسٹرائیکس بیک’ اور ‘ پاکستان ایئرفورسز ہمارا فخر’ کے نام سے ہیش ٹیگ دنیا بھر میں ٹاپ ٹرینڈ بن گئے۔

سوشل میڈیا پر پاکستان فورسز کے خوب چرچے ہیں اور ٹوئٹر صارفین کی جانب سے مختلف تصاویر کے ساتھ ساتھ اپنے خیالات کا اظہار بھی کیا جارہا ہے۔دنیا بھر میں #PakistanArmyZindabad، #PakistanStrikesBack اور #PakistanAirForceOurPride ٹاپ ٹرینڈ کر رہے ہیں جس میں اب تک ہزاروں افراد اپنی رائے کا اظہار کرچکے ہیں۔ٹوئٹر صارف حسین شاہ نے دو تصاویر شیئر کیں اور اس پر تبصرہ کرتے ہوئے لکھا کہ پاکستان کے 6 درخت بھارت کے دو لڑاکا طیاروں کے برابر ہے۔

ظفر محمود نامی ٹوئٹر صارف نے لکھا کہ اگر آپ کا بولر یا جہاز لائن کراس کرے گا تو اس کا نتیجہ یقیناًسرپرائز ہوگا۔سدرہ نامی ٹوئٹر صارف نے عالمی میڈیا پر شہ سرخیاں بننے والی خبروں کے تراشے شیئر کیے اور لکھا کہ اسے سرجیکل اسٹرائیک کہا جاتا ہے جسے ہر کوئی بیان کرتا ہے۔سید لیلا جعفری نامی ٹوئٹر صارف نے دو مختلف تصاویر شیئر کیں اور اس پر تبصرہ کیا کہ ہم جواب دینے کا سوچیں گے نہیں بلکہ جواب دیں گے۔

سجاد نامی ٹوئٹر صارف نے ایک فضا میں بلند تباہ شدہ طیارے کی تصویر شیئر کی اور اس پر لکھا کہ تم رات کے اندھیر میں چھپ کر وار کرتے ہو اور ہم دن کے اجالے میں دھاڑتے ہیں۔ پاکستان کی جانب سے لائن آف کنٹرول (ایل او سی) کی خلاف ورزی کرنے والے بھارتی طیارے گرائے جانے اور پائلٹ کو حراست میں لئے جانے کے بعد بھارت کے امن پسند شہریوں نے سوشل میڈیا کو ’’ٹیک اوور‘‘ کر لیا ہے اور اپنے ہی انتہاء پسندوں کے ’لتے‘ لینے میں مصروف ہیں۔

سوشل میڈیا پر “SayNoToWar#” کا ہیش ٹیگ ٹرینڈ کرتا رہا جس میں پاکستان اور بھارت دونوں کے باسیوں کی جانب سے ہی ٹویٹس کی جاتی رہیں اور جنگ کا بھوت اتار کر خطے کے امن کیلئے کام کرنے کی باتیں ہونے لگیں۔ ایسے میں بھارتیوں نے اپنے انتہاء￿ پسندوں بالخصوص میڈیا میں کام کرنے والے افراد کو بھی خوب آڑے ہاتھوں لیا جنہوں نے اپنے ملک میں جنگی جنون پروان چڑھایا۔

بھارت کے ایک امن پسند شہری ’ویبھوو ویشال‘ نے تو پاکستانیوں کو یہ پیشکش بھی کر دی کہ وہ ان کا ونگ کمانڈر ابھی نند واپس کر کے ان کے اینکر لے جائیں گے اور ان کیساتھ کچھ بھی کر لیں۔ ویبھوو نے لکھا ’’پیارے پاکستان۔۔۔ ونگ کمانڈر ابھی نندن ہمیں لوٹا دو اور اس کے بدلے ہمارے نیوز اینکرز لے جائو۔ سب کو لے جائو، اپنے پاس رکھو اور ان کیساتھ کچھ بھی سلوک کرو۔ اور برائے مہربانی انہیں کبھی واپس مت کرنا، کبھی بھی نہیں۔۔۔ پلیز۔

‘‘ویبھوو کی اس پیشکش پر عبید اعوان نامی ٹوئٹر صارف نے لکھا ’’مودی کو بھی ساتھ ہی بھیج دینا، انڈیا کی جان چھوٹ جائے گی‘‘شازیہ محمود نے لکھا ’’میں نہیں جانتی کہ بھارتی صحافی پاکستان کیخلاف نفرت کیوں پھیلاتے ہیں، ہمارے صحافی ایسا نہیں کرتے حتیٰ کہ ہمارے تو سیاستدان بھی ایسا نہیں کرتے‘‘جویریہ صدیق نے لکھا ’’نہیں، ہمیں وہ نہیں چاہئیں کیونکہ وہ بھی ’زینو فوبیا‘ (دوسری نسلوں کے لوگوں سے نفرت کرنے والے) کا شکار ہیں‘‘

نعمان عابد نے لکھا ’’ہم آپ کے صحافیوں کو دیکھنے سے پہلے اپنے صحافیوں سے نفرت کرتے تھے لیکناب ہم اپنی نعمتیں گنتے نہیں تھکتے کہ ہمارے صحافی کتنے عقل والے ہیں‘‘ویبھوو نے نعمان کو جواب دیا کہ ’’تم بہت خوش قسمت ہو۔۔۔ واقعی بہت زیادہ خوش قسمت ہو‘‘نعمان عابد نے جواب دیا ’’پریشان مت ہوں آپ کا پائلٹ ہمارا مہمان ہے اور پورا پاکستان اس بات کو یقینی بنائے گا کہ وہ صحیح سلامت اپنے گھر پہنچ جائے‘‘رضوان علی باجوہ نے لکھا ’’ہمارے نواز اور زرداری لے جائو‘‘ویبھوو نے جواب دیا ’’یہ بے ایمانی ہے‘‘خرم نے کہا ’’یہ بے ایمانی نہیں بلکہ خالص ڈیل ہے۔۔۔ نواز اور زرداری لے جائو‘‘

شیراز احمد نے لکھا ’’چلو یہ معاملہ سب کیلئے آسان بناتے ہیں۔۔۔ سب کو سمندر میں پھینک دیتے ہیں، کیا کہتے ہو؟؟؟‘‘ویبھوو نے لکھا ’’میں پہلے سے ہی گوگل پر سرچ کر رہا ہوں کہ ہمارے سمندر کا سب سے گہرا حصہ کون سا ہے‘‘

(298 بار دیکھا گیا)

تبصرے