Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
هفته 24  اگست 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

سانگھڑ کی دلخراش داستان

ویب ڈیسک جمعه 22 فروری 2019
سانگھڑ کی دلخراش داستان

سانگھڑ میر پور خاص روڈ پر واقعہ کنڈیاری کے نواحی گائوں وسان فارم کے نزدیک ہندو مینگھواڑ قوم کے پریم چند میگنھواڑ کے گھر رات کی تاریکی میں گھر میں اچانک آگ بھڑک اٹھی اور دیکھتے ہی دیکھتے پورے گھر کو آگ نے اپنی لپیٹ میں لے لیااور گھر میں سوئی ہوئی 3 سگی بہنیں آگ میں جھلس کر کوئلہ بن گئی تینوں معصوم ہلاک ہونے والی بچیوں کو اسپتال لایاگیا ‘ اطلاع ملنے پر پولیس واقعہ کی اطلاع ملتے ہی آس پاس گائوںمیں کہرام مچ گیا ۔ علاقہ مکینوں نے اپنی مدد آپ آگ پر قابو پایا اور آس پاس کے گھروں کو جلنے بچالیا‘ علاقے کے لوگوں کاکہنا ہے کہ آخری وقت تک بھی فائر بریگیڈ واقعہ والی جگہ نہ پہنچ سکی اور دیکھتے ہی دیکھتے پورا گھر جل کر راکھ کا ڈھیر بن گیاہے گھر میں سوئی ہوئی 3 سگی بہنیں جن کی عمر یں 8 سال ‘ 4 سال اور 2سال بتائی جاتی ہے‘ جن میں چاندنی ‘ دیوتا اور لگوری ولد پریم چند مینگھواڑ بتایا جاتاہے‘ آگ میں جل کر ہلاک ہوگئی ہلاک ہونے والی بچییوں کو اسپتال سے ڈاکٹروں نے ضروری کارروائی کرنے کے بعد ورثہ کے حوالے کردی ‘ تینوں بہنوں کی نعشیں گائوں پہنچنے پر کہرام مچ گیا اور واقعہ کی اطلاع پورے علاقے گائوں اور آس پاس کے شہروں میں پہنچنے پر عوام بڑی تعداد میں واقعہ والی جگہ پہنچی اور ضلع سانگھڑ مری نے واقعہ کی اطلاع ملتے ہی اظہار ہمدردی کرتے ہوئے اپنے دکھ کا اظہار کیااور فورا ً متاثرہ خاندان کے لیے ایک لاکھ روپے پہنچائے دوسرے روز متاثرین خاندان کے گھر تعزیت کے لیے پہنچ گئے اورڈپٹی کمشنر سانگھڑ نثار احمد میمن ‘ ایس ایس پی سانگھڑ ذیشان علی صدیقی اور ہندو پنچائیت مینگھواڑ قوم کے صدر متاثرین کی امداد کے لیے امدادی سامان لے کر ہلاک ہونے والی بچیوں کے والد پریم چند مینگھواڑ کے گھر پہنچے اور متاثرہ خاندان سے افسوسناک واقعہ پر اظہار افسوس کرتے ہوئے متاثرین کی مکمل امداد کرنے کی یقین دہائی کرائی گئی‘ 3 معصوم جانوں کی اچانک ہلاکت پرسوگ اور خاموشی سی طاری ہوئی نظر آتی ہے‘ پورے علاقے میں معصوم بچیوں کو ہندومذہب کے مطابق ان کی رسومات ادا کی گئی اور ہلاک ہونے والے بچوں کے والد پریم چند مینگھواڑ کی تعزیت کاسلسلہ جاری ہے‘ اس موقع پر ضلع سانگھڑ کے ہندو برادری کی سماجی شخصیا ت ہندو برادری کے رہنما راجیش کمار ہیر داسانی نے ہمارے نمائندے حاجی عید وخان جیلانی کو واقعہ کی تفصیلات بتاتے ہوئے بتایا کہ پریم مینگھواڑ ایک نہایت ہی غریب شخص ہے ‘ محنت مزدوری کرکے اپنے بچوں کا پیٹ پالتا اور رات کی تاریکی میں علاقے کی لائٹ بھی بند تھی اور واقعہ والے دن رات کو سردی بھی بہت تھی اور تیز ہوائیں چل رہی تھی کہ پریم چند نے اپنے گھر میں ایک چراغ جلایا ہواتھااور آدھی رات کے وقت سب سوئے ہوئے تھے کہ اچانک دیکھتے ہی دیکھتے پورے گھر میں آگ بھڑ ک اٹھی اپنے جانیں بچاکر میاں ‘ بیوی گھر سے باہر نکلے مگر اندر تینوں معصوم بچیاں سوئی ہوئی تھی کہ آگ نے ان تینوں کو اپنی لپیٹ میںلے لیا‘ تینوں بچیاں جل کر کوئلہ بن گئی ‘ علاقے کے لوگوں کے اپنی مدد آپ کے تحت آگ پر قابو پایا‘ مگر پریم مینگھواڑ کی دنیا اجڑچکی تھی‘ اس افسوسناک واقعہ پر جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے۔

(153 بار دیکھا گیا)

تبصرے