Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
هفته 24  اگست 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

جن کا بھائی

ویب ڈیسک بدھ 20 فروری 2019
جن کا بھائی

میں چاہتا ہوں کہ میرے پاس بہت سے پیسے آجائیں اور میں دولت مند ہوجاؤںعزیز بولا ارے بس اتنی سی بات میں آپ کو ابھی عمل بتاتا ہوں جن بلانے پر پھر اسی کاہم شکل بھائی حاضر ہوااور اسے اْلٹا عمل بتادیا،جواس نے پڑوسی مزدور کو بتادیاابھی کچھ ہی دن گزرے تھے کہ وہ دونوں بھائی اس کے آستانے پر آکر شور مچانے لگیشور کی آواز شن کر اس کے والد جمال صاحب بھی آگئے شور کی وجہ پوچھی تو وہ بولے دیکھیں جناب میں نے بابا سے کہا تھا کہ میرا قد بہت لمبا ہے اسے مناسب اور میرا بھائی بہت دبلا ہے اسے موٹا کردیں مگر نہ جانے انھوں نے کیسا عمل بتایا کہ میرا قد چھوٹا ہو کر تین فٹ کا ہوگیا اور میرا بھائی موٹاہونے کے بجائے بے تحاشا لمبا ہوگیااور اب تو کمرے میں میں کھڑا بھی نہیں ہوپاتاہم توپہلے والی حالت میں ٹھیک تھے جمال صاحب بولے جو اللہ کی رضا پرراضی نہیں رہتے ان کاایسا ہی حشر ہوتا ہے اسی دوران ایک نقاب پوش بھاگتا ہواآتا ہے اوراپنے منہ سے کپڑا ہٹا کر بولا ارے بابا میں نے کہا تھا کہ مجھے امیر بنا دو، تم نے مجھے ڈاکو بنادیاجمال صاحب غصے بولے ارے تم اس غریب کو ڈاکو بنادیا۔
عزیز بولا انھوں نے کہا تھا کہ مجھے امیر بنادو اب یہ ڈاکو بن کرڈاکا ڈالیں گے خوب دولت کمائیں گے ، جبھی تویہ امیر بنیں گے جمال صاحب بولے ہاں بات توٹھیک کہی ہے ڈاکو نے کہا کیا خاک ٹھیک کہہ رہا ہے ہر وقت جان خطرے میں رہتی ہے پولیس سے منھ چھپاتا پھرتا ہوں میری زندگی اجیرن ہوگئی ہے۔ اب بھی پولیس میرے پیچھے لگی ہوئی ہے وہ دونوں جنات ایک طرف کھڑے یہ تماشا دیکھ کر خوب ہنسے جارہے تھے عزیز کاسرندامت سے جھکا ہوا تھا اسی دوران جمال صاحب نے آنے والے لوگوں سے کہا جو صحیح راستہ چھوڑ کر غلط راستوں پر چلتے ہیںان کا حشر ایسا ہی ہوتا ہے میں تو پہلے ہی ان سب باتوں کا مخالف تھا میں نے عزیز کو بھی سمجھایا تھا کہ ان چکروں میں مت پڑو مگر اس نے میری ایک نہ سنی اسی دوران پولیس ڈاکو کو ڈھونڈتی ہوئی ان کے گھر داخل ہوگئی ڈاکو وہاں سے بھاگنے لگا تو اسی مخلوق نے ٹانگ اڑا کر اسے گرادیا پولیس نے اسے پکڑ لیا جب پولیس کو ساری صورت حال کا علم ہوا تو پولیس نے عزیز کو بھی گرفتار کرلیاجن کے بھائی نے عزیزکے پاس آکرکہا اب تمھیں پتاچلے گا کہ قید کی حالت میں زندگی کیسی گزرتی ہے ہمیں توتم نے قید کرلیا تھا اب اس کی سزابھگتو تمھارے لیے یہ بہتریہ ہے کہ تم میرے بھائی کو آزاد کردو ورنہ میں تمہیںبرباد کردوں گا۔ عزیز نے کچھ دیر سوچنے کے بعد جن کو آزاد کردیا جن نے اپنے بھائی کو آزاد کرالیا پھر دونوں اپنی دنیا میں واپس جانے کے لیے خوشی خوشی روانہ ہوگئے عزیز انھیں جاتا ہوا حسرت بھری نگاہوں دسے دیکھنے لگا

(309 بار دیکھا گیا)

تبصرے