Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
جمعرات 24 اکتوبر 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

علی رضا عابدی کا قتل اور سندھ میں گورنر راج کی گونج

صابر علی هفته 29 دسمبر 2018
علی رضا عابدی کا قتل اور سندھ میں گورنر راج کی گونج

ایم کیو ایم سے تعلق رکھنے والے سابق رکن قومی اسمبلی علی رضا عابدی کو قتل کردیا گیا۔ علی رضا عابدی کے والد اخلاق حسین عابدی کا کہنا ہے کہ علی رضا کی کسی سے دشمنی نہیں تھی بالکل سچ کہا اخلاق عابدی انتہائی ہنس مکھ نفیس اور دھیمے لہجہ میں بات کرنے والا انتہائی خوش اخلاق شخص کی بھلا کسی سے کیا دشمنی ہوسکتی ہے لیکن اس سے پہلے ہونے والے بیشتر سیاسی رہنمائوں کا قتل کیا کسی سے دشمنی کا نتیجہ تھا، 27 دسمبر کو محترمہ بے نظیر بھٹو کی برسی منائی گئی کیا بے نظیر بھٹو کی کسی سے دشمنی تھی پھر انہیں کیوں اور کس نے قتل کرایا۔ علی رضا عابدی کے قتل پر ایم کیو ایم کے سینئر رہنماء سید سردار احمد کا کہنا ہے کہ علی رضا عابدی کا قتل ٹارگیٹ کلنگ نہیں ہے سازش ہے علی رضا عابدی وہی کام کررہے تھے جو میں کررہا ہوں یعنی ایم کیو ایم کے دھڑوں کو ملانے کا کام۔ سید سردار احمد انتہائی سینئر سیاست دان ہی نہیں وہ سیننئر بیورو کریٹ اور سندھ کے چیف سیکریٹری رہے ہیں ان کی بات انتہائی اہمیت کی حامل ہے لیکن پھر بھی یہ کہا جارہا ہے کہ علی رضا کا قتل ٹارگیٹ کلنگ ہے اس قتل کو بھی ماضی کی ٹارگیٹ کلنگ کے واقعات سے جوڑا جارہا ہے، علی رضا عابدی کے قتل سے پہلے ہونے والے واقعہ پی ایس پی کے 2 کارکنوں کے قتل کو بھی اس قتل کی کڑی قرار دیا جارہا ہے یہ ثابت کرنے کی کوششیں بھی کی جارہی ہے اس واقعہ کا تعلق بھی لندن گروپ سے ہوسکتا ہے۔ ماضی میں بھی یہ پریکٹس رہی ہے کہ شہر میں جو بھی واقعہ ہوا اسے ایک مخصوص گروپ سے جوڑ دیا جائے اور سارا ملبہ اس گروپ پر ڈال کر اپنی جان چھڑا لی جائے بالکل اسی طرح جیسے ہر معاملے میں امریکہ کو قصور وار ٹھہرایا جاتا ہے پاکستان میں یا دنیا میں مذہبی حوالے سے بھی کوئی بات ہو تو فوری الزام امریکہ پر لگا دیا جاتا ہے، پہلے اپنے گریبان میں جھانکنے کی کوئی کوشش نہیں کی جاتی، جس گروپ کو مار مار کر دیوار سے لگادیا اور گذشتہ 5 سالوں سے جنہیں سانس لینے کی بھی اجازت نہیں ہے۔ کسی بھی واقعہ کا سارا ملبہ آج بھی ان کی طرف اچھال دیا جاتا ہے اگر سارا کام کوئی باہر سے بیٹھ کر کررہا ہے، تو پھر آپ اندر بیٹھ کر اور حکومت کی تمام تر طاقت اور اختیارات رکھتے ہوئے بھی بے بس کیوں ہیں۔ علی رضا عابدی کا جنازہ ڈیفنس کی امام بارگاہ یژرب میں پڑھایا گیا تقریباً ہر سیاسی جماعت کے رہنما نماز جنازہ اور تدفین میں موجود تھے اس موقع پر ہمیں کئی لوگوں سے بات کرنے کا موقع ملا، پیپلزپارٹی کے کراچی سے تعلق رکھنے والے ایک سینئر رہنماء کا کہنا تھا کہ کراچی میں پھر سے دہشت گردی ایک منصوبے کے تحت شروع کی گئی ہے اس کا مقصد صوبہ سندھ میں گورنر راج کی راہ ہموار کرنا ہے ان کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی کی حکومت پنجاب کے بعد سندھ میں پیپلزپارٹی کی حکومت کو نشانہ بنانا چاہتی ہے سندھ میں پیپلزپارٹی کے رہنمائوں کے خلاف جے آئی ٹی، گرفتاریاں اسی سلسلے کی کڑی ہیں ان کا کہنا تھا کہ معلوم نہیں اس حوالے سے جو اسکرپٹ لکھا گیا ہے اس میں آگے کیا لکھا ہے ان کا کہنا تھا کہ اس وقت پیپلزپارٹی اور ایم کیو ایم کو اپنے تمام تر اختلافات بھلا کر اپنے تعلقات پر نظرثانی کرتے ہوئے دوبارہ تعلقات بہتر بنانے کی ضرورت ہے پیپلزپارٹی کے ان رہنماء کا کہنا تھا کہ ایم کیو ایم کو اب پہلے والی ایم کیو ایم کی نظرسے نہیں دیکھنا چاہئے۔ الطاف حسین کا چیپٹر کلوز ہوچکا ہے اب موجودہ ایم کیو ایم کو مائنس الطاف حسین کی حیثیت سے
دیکھا جائے ،متعدد وہ شخصیا ت جن کا ایم کیوایم سے کو ئی تعلق نہیں ہے لیکن وہ اردوبو لنے وا لے اورمہا جر کمیونٹی سے تعلق رکھتے ہیں علی رضا عابدی کے قتل پر وہ انتہا ئی افسر دہ تھے ان کا کہنا تھا کہ صر ف مہا جرہی کیوں مر تا ہے صر ف کرا چی کے لو گوں پر ہی یہ ظلم کیوں کیا جاتا ہے ان کا کہنا تھا کہ مہا جروں کی یونٹی اتحا د کسی کو پسند نہیں ہے یہی وجہ ہے کہ مہا جروں کے اتحا د کی وا حد علا مت اور سیاسی جماعت ایم کیوایم کوتوڑا گیا اور مہا جروں کی یونٹی ختم کی گئی علی رضا عابدی مہا جر دھڑوں کو ملا نے کی کوششیں کررہے تھے اس لئے ان کو ما ر نے وا لے وہی لوگ ہو سکتے ہیں جو مہا جروں کو پھر سے ایک نہیں دیکھنا چاہتے ایم کیوایم کے حامی ایک اور ا ر دو بو لنے وا لے نے اس مو قع پر گفتگو کر تے ہوئے کہا کہ بلد یا تی ضمنی الیکشن میں پی ٹی آئی نے دیکھ لیا ہے کہ کرا چی کے عوام میں اس کی کیا حیثیت ہے کراچی کے جن انتخا بی حلقوں سے پی ٹی آئی نے عام انتخا با ت میں قومی وصو بائی اسمبلی کی نشستوں پر کا میابی حا صل کی تھی وہاں سے وہ یوسی چیئرمین اور کونسلر کا الیکشن بھی ضمنی بلدیاتی انتخابا ت میں نہ جیت سکی جس کے نتیجے میں اس الزا م کو تقویت ملتی ہے کہ عام انتخا با ت میں پی ٹی آئی کو کرا چی سے نشستیں دلوائی گئی ہیں ان صا حب کا کہنا تھا کہ لگتا ہے کہ سندھ میں گو ر نر راج لگا نے کے لئے ایک مر تبہ پھرکرا چی کے حا لا ت خرا ب کئے جارہے ہیں پیپلزپار ٹی پر کرپشن کے الزام لگا کر اور گر فتا ریاں کر کے بالکل بے بس کر دیا جا ئے گا سندھ اسمبلی کے کئی ارکان بھی کرپشن کے الزا ما ت کے زمرے میںآئیں گے اور اس طر ح سندھ اسمبلی توڑنے کا جوا ز پیدا کیاجا ئے گا تاکہ گو ر نر را ج لگا کر صو بہ سندھ بھی پی ٹی آئی کے کنٹرو ل میں دیا جائے ان صا حب کا کہنا تھا کہ گزشتہ د نوں وفاقی وزیر اطلاعا ت فوا د چو ہد ری نے اپنے ایک بیا ن میں سند ھ میں گو ر نر را ج کے حوا لے سے بھی بات کی تھی ،بہر حا ل جتنے منہ اتنی با تیں لو گوں کے تبصر ے را ئے اور تجز یئے اپنی جگہ لیکن وفاقی حکومت اور حکو مت سندھ میں جو سیاسی کھینچا ؤ ہے وہ صا ف دیکھا جاسکتا ہے فو ا د چو ہد ری نے 31دسمبر تک آصف علی زر دا ری کی گرفتاری کے سوال کے جواب میں انشا ء اللہ کہا ہے پی ٹی آئی خصوصا ًوزیراعظم اور ان کے وزرا ء اپنی جماعت کے لوگوں کو چھوڑکر سب کو چو ر، ڈاکو لٹیرے کا شور مچا رہے ہیں اپوزیشن کی سب سے بڑی جماعت مسلم لیگ (ن)کے 2بڑے لیڈر نوازشریف ،شہباز شریف سمیت خواجہ سعد رفیق اور دیگر کو جیل میں ڈا ل دیا گیا ہے ،سندھ میں اب آصف علی زر داری سمیت سندھ کے تمام بڑے چھوٹوں کی گرفتاری متوقع ہے ایسا لگ رہا ہے کہ وزیراعظم عمران خان اپنے تمام مخالفین کو جیل میں ڈال کر تنہا حکو مت کر نا چاہتے ہیں وہ اپنی حکو مت میں کسی قسم کی اپوزیشن کو بر داشت کر نے کو تیارنہیں ہیں بلا ول بھٹو نے بھی اس حوالے سے یہ الزام لگایا ہے کہ عمران خان ملک میں ون پار ٹی رول ایک جماعت کی حکمرانی چا ہتے ہیں اس کا مطلب ہے ملک میں جمہوریت کی بسا ط لپیٹ کر صر ف ایک جماعت اورایک شخص کو ملک میں مکمل حکمرانی دیدی جا ئے ، سندھ میں گو ر نر را ج کی گونج سے قبل یہ اطلاع بھی آئیں تھیں کہ ملک کو صدارتی نظا م کی طر ف لے جا یا جارہا ہے تاہم اصل صور ت حال یہ ہے کہ پی ٹی آئی حکو مت کے گزشتہ 4،5ماہ میں ملک بجا ئے نیا پاکستان بننے کے نہ صر ف پرا نے پاکستان کی جا نب رواں دواں ہے بلکہ لگتا ہے کہ اگر اسی تیزی سے پرا نے پاکستان کی طرف حکو مت کی پر واز رہی تو پتھر کے زما نے میں بھی جاسکتاہے اس لئے نئے پاکستان میں بھی لو گوں کو نہ گھروں میں گیس مل رہی ہے نہ سی این جی اسٹیشنوں میں بجلی کی لو ڈشیڈنگ کا وہی حا ل ہے پیٹرو ل کے نرخ سمیت تمام اشیا ء ضرو ر ت کی قیمتیں آسمان سے با تیں کررہی ہیں غریب اور عام آدمی جس ریلیف ملنے کا انتظار کر رہا تھا وہ اسے ملنا مشکل نظر آرہا ہے کہ اس لئے کہ وزیراعظم سمیت سا ری حکو مت صر ف اپوزیشن کا احتسا ب کر نے میں مصروف ہے انہیں عوام کی مشکلا ت اور مسائل کے حل کے لئے با لکل فرصت نہیں مل رہی ہے علی رضا عابدی کے قتل نے مہا جروں کو پھریہ سوچنے پرمجبور کر دیا کہ انہیں اسی طر ح دیوار سے لگا یا جاتا رہے گا ،ان کا کوئی ہمد رد اور خیر خواہ نہیں ہے ،ان کی لیڈر شپ اور نما ئندگی چھین کر انہیں بے دست وپاکر دیا گیا ہے ار دو بو لنے وا لے یہ کہنے پر مجبو ر ہو گئے ہیں کہ مہا جروں کو دیوار سے لگا نے میں سب ایک صفحہ پر آجا تے ہیں مسلم لیگ ن ،پیپلز پار ٹی ،پی ٹی آئی جماعت اسلامی سمیت اسٹیبلشمنٹ سب مل کر اس عمل میں شریک ہو تے ہیںاور یہ چاہتے ہیں کہ مہاجر عوام مہاجر نام یا مہا جر جماعت کے حوا لے سے سیاست نہ کریں بلکہ پاکسانی بنیں بہت اچھی با ت ہے لیکن کیا مسلم لیگ ن ،پیپلز پار ٹی ، اے این پی اور دیگر جماعتوں کے لئے بھی ایسی سو چ رکھی جا ئے گی یا صر ف اردو بو لنے وا لوں پر ہی یہ سو چ اور خواہش جبر کے ذریعے مسلط کی جاتی رہے گی ۔

(396 بار دیکھا گیا)

تبصرے