Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
هفته 07 دسمبر 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

2 دن…2 نعشیں

ارشد انصاری جمعه 21 دسمبر 2018
2 دن…2 نعشیں

تشد د کسی بھی قسم کا کیا جائے معاشرے میں وہ نا پسند ید ہ عمل قرار دیا جا تاہے اور غیر قا نو نی عمل بھی سمجھا جا تا ہے اور تشدد کر کے کسی بھی انسانی جان کو نقصان پہنچا تے ہوئے اسے قتل کر نا تو اس سے بھی بڑا غیر قا نو نی اور در ند گی سفا کی سے تشبیہ دی جا تی ہے اور اس عمل میں ملو ث افر اد یا کردار کو ظا لم قر ار دیا جاتاہے اور ان عمل کے کر نے وا لو ںکو گر فتار کر کے قرار وا قعی سز ا بھی دی جا تی رہی ہے لیکن بچو ںکے ساتھ تشدد کے واقعا ت میں ا ضا فہ اور انہیں بے رحمانہ طر یقے سے قتل کر نے کی وا ر دا تو ں پر دل دہلا دینے والے وا قعا ت کی ر پو ر ٹ ہو تے ہیں ملنے والی ا طلا عا ت اور وا قعا ت کا مطالعہ کر کے اور اس طرح کے سنگین وا قعا ت رو نما ہو نے کی خبر یں نشر یا تشہیر کی جا تی ہے تو ان ظا لمو ں کے خلا ف فی الفو ر ا نسانی فطرت کے مطابق ظالم کردا رو ں کو کیفر کر دار تک پہنچانے کی صدائیں اور سو چ بھی پید ا ہو جا تی ہے اور کئی ایسے وا قعا ت رو نما ہو تے ہیں انکے کر دار ظالموں اور سفا کو ںکو عبر ت ناک سز ائیں سنا دی جا تی ہے اور معا شر ے میں در ند گی و سفا کی قا تلو ں کی موت کی سزائیں سننے کے بعد کسی حد تک،معا شر ے میں وا قعا ت کے خلا ف انصا ف کا بو ل با لا د کھا ئی دیتاہے حید ر آباد میں بھی 15 د سمبر ہفتہ کے رو ز ایساہی ایک ننھی منی معصوم تین تا چار سالہ بچی کی لاش ملنے کا وا قعہ رونما ہو ا پنیا ری تھانے کی حد ود کے ریلو ے پھا ٹک پنیا ری کے قریب سے ایک معصوم تین تا چار سالہ بچی کی ہا تھ کٹی نا معلو م نعش کی ا طلا ع ملنے پر علاقہ مکینو ں اور شہر یو ں میں خو ف کی لہر پھیل گئی تھی فوری طورپر پنیا ری پو لیس بھی و قو عہ پرپہنچی اور علا قے میں ہجو م دیکھ کر پو لیس بھی کچھ سٹ پٹاگئی اور بڑی مشکل سے لو گو ں سے معلو ما ت کر نا چا ہی لیکن ہر کھڑا وہ شخص جو پو لیس کے خو ف سے ڈرتا ہے اس کے منہ میں نہ جانے کہا ں سے ز با ن آ گئی اور وہ اس بچی کی نعش جو کہ تشدد ز دہ اور ہا تھ کٹی ملنے پر غم سے نڈ ھا ل تھا ہی پولیس کو ان جیسے ان وا قعا ت کا ذمہ دار قر ار دے رہا تھا پھر کیا تھا پو لیس نے چا لا کی اور چا بک د ستی دکھاتے ہوئے مذ کو رہ علا قہ مکینوں کی ہمد ر دی لیتے ہوئے نعش کو فوری اید ھی ا یمبو لینس کے ذ ر یعے سول اسپتال پہنچا یا جہا ں بچی کی نعش کو سول اسپتال کے مردہ خانے میں شنا خت کے لیے ر کھا گیا تھا پنیا ری پولیس نے نا معلو م بچی کی نعش کے ملنے پر اس کی شناخت کے حو الے سے بتایاکہ ملنے والی بچی کے نعش کی شنا خت نہیں ہو سکی ہے جبکہ گمشد ہ بچو ں کی اطلاعات پر کئی افراد اپنے بچو ں کی گمشد گی کی درخواست کی کاپی لیے سول اسپتال پہنچے تھے تاہم مذکورہ بچی کی نعش کی شنا خت نہیںہو سکی ہے حید رآ باد کے علا قو ں پھلیلی پر یٹ آ باد ‘بھٹی گو ٹھ‘ کا لی مو ری‘ لیاقت کا لو نی نو رانی بستی سمیت دیگر علا قوں میں 3 تا 4 سالہ معصوم نا معلوم بچی کی ہا تھ کٹی نعش ملنے کے بعد سے اب تک نعش کی شنا خت نہ ہونے اور ملو ث کردارو ںکی گر فتار ی عمل میں نہیں آنے پر مذ کورہ علاقوںکے ر ہا ئشیوں کی جانب سے غم و غصے اور عجیب صو ر تحا ل د کھا ئی دیتی ہے‘ ابھی اس بچی کی نعش کے ملنے کا صد مہ شہر یو ں نے بھلا یا بھی نہ تھا کے ایک اور اس طرح کی بچے کی ایک اور نا معلوم ہا تھ بند ھی نعش ملنے کا وا قعہ رونما دکھا ئی دیا‘ حیدر آباد کی مصر و ف و معروف شا ہر اہ کینٹ قبر ستان رو ڈ پر وا قع جی سی ڈی گرا ئو نڈسے ایک بچے کی نا معلوم نعش ملنے کی ا طلا ع پر شہر یو ںکی جانب سے غم و غصے اور اس طرح کے واقعا ت کے رونما ہونے پر شہر یو ںبے چینی پھیلی ہوئی ہے‘نا معلو م لڑ کے کی خستہ حا ل اور نا قابل شناخت نعش جی سی ڈی گرا ئو نڈ سے ا طلا ع قر یبی گوٹھ پہنو ر کے مکینو ں کے بچو ںکی جانب سے دیئے جا نے پر پہنو ر گو ٹھ کے مکینو ںنے جی او آ ر تھانے کی پو لیس کونعش کی ا طلا ع دی جس پر پو لیس نے پہنچ کر اطلا ع دینے والے بچو ں اور انکے اہلخا نہ سے پو چھ گچھ کی تو معلوم ہو اکے مذ کورہ بچے جا نو ر چر ا رہے تھے کہ انہیں جھا ڑیو ں کے در میا ں ایک نعش پڑی دکھائی دی تھی جی او آ ر تھانے کی پو لیس کے مطابق مذکورہ بچے ڈر کر اور سہم کر بھا گ کھڑ ے ہوئے تھے اور اپنے اہل خا نہ کو نعش کی ا طلا ع دی تھی جس کے باعث ہمیں بھی ا طلا ع دی گئی تھی پولیس نے نعش کو ایدھی ر ضا کا ر و ں کی مد د سے سول ا سپتال منتقل کی جی او آر تھا نے کی پو لیس کے مطابق متو فی شلوارقمیض میں ملبو س تھا اور بظا ہر متو فی کی عمر 14سال کے در میان دکھا ئی دیتی ہے جبکہ ڈا کٹر و ں کا کہنا ہے کہ نعش16 روز پر انی ہے جس کی وجہ سے اس کا چہر ہ انتہا ئی حد تک نا قا بل شنا خت جبکہ جسم بھی جگہ جگہ سے گھل گیا تھا جی سی ڈی گرا ئو نڈ سے ملنے والی گز شتہ د نو ں 14سالہ لڑ کے کی ہا تھ بند ھی نعش کی شنا خت کے لیے پو لیس نے لا پتہ ہو نے والے بچوںکے اہل خانہ کی جا نب سے جمع کر ائی گئی مختلف تھا نو ں میں درخو ا ستو ں پر غور کیا گیا اور یو ں پولیس نے نیا پل کے قریب مو چی پا ڑے میں ہند و افراد کی اکثر یت آبا دی کا ر ہا ئشی چو دہ سالہ پر کا ش ولد د لیپ کما ر موچی بھی کئی رو ز سے گھر سے لا پتہ تھامختلف میڈیا اور ا خبا را ت میں تشہیر ہونے والی جی ٹی سی گرائونڈسے لا پتہ لڑ کے کی ہا تھ بند ھی نعش کی خبر و ں پر لا پتہ ہونے والے چو دہ سالہ پر کا ش کما ر ولد دلیپ مو چی کے اہل خا نہ نے فوری پولیس نے رابطہ کیااور یوںکر شن موچی کے اہل خا نہ سول ا سپتال ملنے والی لا پتہ نعش کو دیکھنے پہنچے پھر کیا تھا چو دہ سالہ لڑ کے کی نعش دیکھتے ہی اس کی شنا خت اس کے اہل خا نہ نے پرکاش ولد دلیپ کما ر مو چی کے نام سے کر لی اور نعش سے لپٹ کر ز ا ر و قطا ر اس کی والدہ اور دیگر ر شے دار بین کر تے دکھا ئی دیئے اور سول ا سپتال میں ہند و اکثر یتی علا قو ں کے علا قہ مکین سمیت پرکا ش کی نعش کے گر د ر شے دار جمع ہو گئے اور انصا ف کی اپیل کرتے دکھا ئی دیئے‘ جبکہ قا تلو ں کی گر فتار کا مطالبہ بھی کیا گیا،جی او آ ر تھا نے کی پو لیس نے ضر وری کاررو ائی کے بعد اسپتال انتظامیہ کی مد د سے نعش کو ورثا ء کے حو الے کر دیا اور یو ں پرکاش ولد دلیپ کمارکی نعش کو نیا پل کے قریب مو چی پاڑے میں لایاگیا توعلا قے میں ایک عجیب سی کیفیت تھی ہر آنکھ اشکبا ر تھی اور والدین بھی اپنے بچو ںکو با ہر نکا لتے دیکھ کر خو فز دہ د کھا ئی دیئے اور قر یبی مسلم ہو یا ہندوآبادی تمام ہی بچے کی ہلا کت پر ور ثا ء کو انصا ف کی فراہمی کا مطا لبہ کر تے د کھا ئی دے رہے تھے اس موقع پر پولیس موبا ئلیں اور پو لیس نفر ی بھی مو جود تھی آ خر ی ا طلا عا ت تک پر کا ش کے ور ثاء کی جا نب سے وا قعہ کا مقدمہ درج نہیں کر ا یا گیا تھا جبکہ ذ رائع کا کہنا ہے کہ پر کا ش کی آخری ر سو ما ت کے بعد اسکے ور ثاء کی جا نب سے مقدمہ درج کر انے کے لیے پولیس ایک با ر پھر رابطہ کر ے گی کرشن ولد دلیپ کما ر کے بعض ر شتے دا رو ں شہر یو ںکا مطا لبہ ہے کہ وا قعہ کا مقدمہ درج کر ایا جائے تاکہ پر کا ش کے قا تل بے نقاب ہو ں اور کوئی بھی سفا ک شخص یا افراد کسی کی اولاد کو اس طرح ا غوا ء کر کے قتل جیسی سنگین وا ردات نہ کر سکے بحرحال خو ن خون ہے رائیگا ں نہیں جاتاہے قا تل گر فتار ہو نے چاہیے بحر حا ل حید ر آ باد میں مختلف تھا نو ں کی حد ود سے ملنے والی دو بچو ںکی نعشو ں کا ملنا اور انکے قا تل ملز ما ن کا کو ئی سر ا غ نہ لگنا تو پھر یہی کہا جا سکتا ہے کہ شہر یو ں کی جا نب سے ان کے بچے اب ا سکول اور گھر و ںسے نکلتے ہوئے خو ف ذ د ہ دکھائی دے ر ہے ہیں اور شہریوںکو بھی عدم تحفظ اپنے اہل خانہ کی طرح سمجھ رہے ہیں شہر یو ں کی اس تشویش کو کم کر نے اور ختم کر نے کے لیے مختلف متعلقہ ادا رو ںکی کا ر کر د گی کو بہتر بنا نے کی ضر ورت ہے جو کہ ان بچو ںکے وا قعا ت یا پھر قتل کے وا قعا ت کے رونما ہونے کا حکام نو ٹس لیں اور شہر حیدر آباد میں پھیلی ہوئی شہر یو ں کی بے چینی کو دو ر کر نے کے لیے واقعا ت میںملو ث قا تلو ں کو گر فتار کیا جائے۔

(505 بار دیکھا گیا)

تبصرے