Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
منگل 22 اکتوبر 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

سندھ حکومت کا عدالت عظمی سے رجوع کرنے کا فیصلہ

قومی نیوز اتوار 02 دسمبر 2018
سندھ حکومت کا عدالت عظمی سے رجوع کرنے کا فیصلہ

کراچی ……تجاوزات کے خلاف عدالتی حکم پر آپریشن،سندھ حکومت نے رہائشی آبادیوں کومسمارہونے سے بچانے کے لیے کا عدالت عظمی سے رجوع کرنے کا فیصلہ کیا ہے اس بات کا اعلان وزیراعلی سندھ کے مشیربرائے اطلاعات وقانون اینٹی کرپشن سندھ مرتضی وہاب نے سندھ کابینہ کے اجلاس کے بعد بریفنگ دیتے ہوئے کیا۔ مرتضی وہاب نے کہاکہ تجاوزات کا خاتمہ ضروری ہے لیکن گھروں کو مسماراورلوگوں کوبے گھر نہیں کیا جانا چاہیے وزیراعلی سندھ کی ہدایت پرسپریم کورٹ میں نظرثانی پٹیشن دائرکرنے کا فیصلہ کیا ہے جس میں عدالت سے درخواست کرینگے کہ وہ فیصلے پر نظر ثانی کرے۔انہوں نے کہاکہ سپریم کورٹ کے حکم کی آڑ میں کئی غلطکام کئے گئے ہیں،جسکا کابینہ نے جائزہ لیا ہے ،لیز املاک کا ہرحال میں تحفظ کرینگے اوروزیربلدیات صورتحال کو مانیٹر کرینگے۔انہوں نے بتایا کہ سندھ کابینہ اجلاس میں تیرہ نکاتی ایجنڈے پرغورکیا گیا کابینہ نے ماضی میں سائٹ کے علاقے میں رہائشی علاقوں کو کمرشلائز کرنے اورنالوں رفاہی پلاٹس پر بھی تجاوزات قائم کرنے کے معاملات کا جائزہ لیا ہے ماضی میں کرائے گئے قبضے اب تمام مسائل کی جڑبنے ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ کمشنر کراچی نے صوبائی کابینہ کو تجاوزات ہٹانے سے متعلق بریفنگ دی ہے ، تجاوزات کے خلاف مہم میں قانونی اعتبار سے قائم گھروں کو نہیں گرایا جائے گا کابینہ اجلاس میں حکومت سندھ کی طرف سے متاثر تاجروں کی بحالی کا منصوبہ بنانے کی بات کی گئی ہے اوراس مقصد کے لیے متاثرہ لوگوں اورمتعلقہ اداروں سے بات چیت کرنے کا فیصلہ بھی کیا گیاہے۔ مرتضی وہاب نے کہاکہ ایمپریس مارکیٹ کی پرانی خوبصورتی کی بحالی کا فیصلہ بھی کیا گیا ہے ماضی میں رفاہی پلاٹوں پر تعمیرات کی گئیں جبکہ پارکس اوردوسری سرکاری آراضی پربھی تجاوزات قائم کی گئیں رہائشی گھروں کے تحفظ کے لیے اگلے ہفتے سپریم کورٹ میں رویو پٹیشن فائل کرینگے۔ قبل ازیں سندھ کابینہ نے کراچی میںتجاوزات کے خاتمہ کے نام پررہائشی آبادیوں کے مکینوں کوہراساں کرنے کا نوٹس لیتے ہوئے انسانی آبادیوں کا تحفظ یقینی بنانے کا حکم دیا ہے اورکہاہے کہ کراچی میں کہیں بھی نئی تجاوزات قائم ہوئیں تو ڈپٹی کمشنر،ڈی ایس پی اورایس ایچ اواس کے ذمہ دارہونگے۔ہفتہ کو سندھ کابینہ کا اجلاس وزیراعلی سندھ سید مراد علی شاہ کی زیر صدارت نیو سندھ سکریٹریٹ میں ہوا جس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے ہدایت کی کہ انسداد تجاوزات مہم کے دوران انسانی آبادیوں کا تحفظ یقینی بنایا جائے۔کابینہ نے کراچی سرکلرریلوے اورتجارتی علاقوں سے بیدخل کیے گئے دکانداروں کومتبادل روزگاراورمعاوضہ کی ادائیگی کے لیے کمیٹی کے قیام کا اعلان کیا ہے اورکہاہے جن لوگوں کے کاروبار متاثر ہوئے ہیں اْن کا روزگار بحال کرنا سندھ حکومت کی ذمہداری ہے۔وزیر اعلیٰ نے ہدایت کی کہ کمیٹی فوری طورپر ان متاثرہ تاجروں کی بحالی کا پلان سندھ کابینہ میں پیش کرے۔ وزیراعلی سندھ سید مراد علی شاہ کا کہنا ہے کہ میں کسی کوبے گھراوربے روزگارہوتے نہیں دیکھ سکتا پارکس فٹ پاتھ اورسڑکوں پرسے تجاوزات کا ضرورخاتمہ کیا جائے مگرجہاں رہائشی گھرہیں انہیں تجاوزات کے نام پرہٹانا ٹھیک نہیں ہے۔ وزیراعلی سندھ نے صوبائی وزرا کوہدایت کی ہے کہ تجاوزات کے خاتمہ کے لیے سپریم کورٹ نے اچھا فیصلہ کیا ہے 43 کلومیٹرکراچی سرکلرریلوے اورتجارتی مراکز سے تجاوزات کے خاتمہ کے لیے متاثرین کی بحالی کا پلان بھی مرتب کیا جائے اورمتاثرین کومعاوضہ کی ادائیگی یقینی بنائی جائے انہوں نے کہاکہ کراچی سرکلرریلوے سے تجاوزات ہٹائی جائیں اوراصل متاثرین جن کے گھروہاں سے ہٹانامقصود ہیں انہیں معاوضہ اورمتبادل رہائش دی جائے۔ وزیراعلی سندھ نے وزیربلدیات سندھ سعید غنی،مشیر مرتضی وہاب ،وقارمہدی اور مئیرکراچی وسیم اخترکومتاثرین کی فوری بحالی کے لیے پلان مرتب کرنے کی ہدایت کی ہے۔

(347 بار دیکھا گیا)

تبصرے