Qaumi Akhbar
Loading site
قومی اخبار
جمعه 18 اکتوبر 2019
LZ_SITE_TITLE
 
New World of Online News

ایمپریس مارکیٹ کے اندر27غیر قانونی دکانیں بھی مسمار

قومی نیوز جمعه 16 نومبر 2018
ایمپریس مارکیٹ کے اندر27غیر قانونی دکانیں بھی مسمار

کراچی سپریم کورٹ کے احکامات پر صدر کے مختلف علاقوں اور ایمپریس مارکیٹ کے اطراف
تجاوزات کو صاف کرنے کے گیارہویں دن جمعرات کو ایمپریس مارکیٹ کے اندر قائم غیر قانونی 27 دکانوں کو بھی توڑ دیا گیا جبکہ ایمپریس مارکیٹ کے اطراف سے بھاری مشینری کے ذریعے نوے فیصد ملبہ اٹھالیا گیا ہے بقیہ ملبہ بھی رات گئے تک اٹھا لیا جائے گا جبکہ عمارت کے سامنے والے حصے کی اسینڈ بلاسٹنگ بھی شروع کردی گئی ہے ، عمارت کو محفوظ بنانے اور اس کی تزئین و آرائش کے بعد ایمپریس مارکیٹ کے چاروں دروازوں کے اطراف خوبصورت باغ بنائے جائیں گے اور ایمپریس مارکیٹ کے اندر ایک شاندار آرٹ گیلری کا قیام عمل میں لایا جائے گا، انسداد تجاوزات کارروائی کے نگراں میٹروپولیٹن کمشنر ڈاکٹر سید سیف الرحمن نے بتایا کہ صدر اور ایمپرمارکیٹ سے ملحقہ علاقوں سے تجاوزات صاف کرنا مشکل کام تھا مگر ناممکن نہیں، سپریم کورٹ کی ہدایت پر یہ کام با آسانی انجام پا رہا ہے کیونکہ تجاوزات کے خلاف ہونے والی کارروائی کو مکمل طور پر انجام تک پہنچانے کے لئے تمام شہری ادارے ایک پیج پر ہیں اور بلاتفریق تجاوزات کے خلاف کارروائی جاری رکھی گئی ہے یہی وجہ ہے کہ مربوط حکمت عملی اور باہمی رابطے کے باعث مہینوں کاکام دنوں میں ہو رہا ہے، انہوں نے کہا کہ کئی لاکھ ٹن ملبے کو صرف چار دن میں صاف کردیا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ملبہ ہٹانے کے بعد ایمپریس مارکیٹ کے چاروں کونوں پر خوبصورت باغ کی تعمیر کاکام جلد ہی شروع کیا جائے گا جس کے لئے زمین کو ہموار بنایا جارہا ہے، انہوں نے کہا کہ پارکوں کے قیام کے بعد نہ صرف یہ کہ ایمپر یس مارکیٹ کی عمارت کی پرانی شکل نظر آئے گی بلکہ اطراف میں رہنے والوں اور یہاں سے گزرنے والوں کو بھی ایک عمدہ ماحول میسر آئے گا۔ انہوں نے کہا کہ انسداد تجاوزات کارروائی میں فٹ پاتھوں کو راہگیروں کے لئے مکمل طور پر کشادہ اور صاف کیا جا رہا ہے لہٰذا وہ دکاندار اور کاروباری حضرات جنہوں نے ابھی بھی اپنی دکانوں کے باہر تجاوزات قائم کرکے فٹ پاتھوں کو بند کر رکھا ہے وہ فوری طور پر فٹ پاتھوں پر رکھے ہوئے سامان کو بھی ہٹالیں تاکہ کارروائی کے دوران وہ کسی بھی طرح کے نقصان سے محفوظ رہ سکیں۔

 

کراچی چڑیا گھر کو بھی تجاوزات سےپاک کرنےکا فیصلہ

کراچی چڑیا گھر کو بھی تجاوزات سےپاک کرنے کے لیے50 سے زائد دکانوں کو مسمار کر نے کا فیصلہ کر لیا گیا ہے۔ کراچی چڑیا گھر کو بین الاقوامی معیار کا بنانے کے لیے سندھ حکومت اور بلدیہ عظمیٰ کراچی نے سنجید گی سے کام شروع کردیا ہے چڑیا گھر گیٹ نمبر 5 سے گیٹ نمبر ایک تک 50 سے زائد دکا نیں قائم ہیں دکانداروں کو بلدیہ عظمیٰ کراچی کے اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ نے خالی کرنے کے نوٹس جاری کردیے ہیں، چڑیا گھر کی تزئین وآرائش جاری ہے لہٰذا چند دن میں دکانیں اورریسٹورنٹس فوری طور خالی کرالیے جائیں گے۔

بلدیہ عظمیٰ کراچی اپنی خالی زمین پر ہاکر زون قائم کرنے پر کام کررہی ہے’وسیم اختر

کراچی میئر کراچی وسیم اختر نے کہا ہے کہ بلدیہ عظمیٰ کراچی اپنی خالی زمین پر ہاکر زون قائم کرنے پر کام کررہی ہے، مناسب زمین کے تعین کے بعد ٹھیلے اور پتھارے والوں کو باعزت کاروبار کی سہولت کی فراہمی کے لئے ان کو ہاکر زون میں جگہ دی جائے گی، شاپنگ پلازوں اور مارکیٹوں کے سامنے تجاوزات کے خاتمے کے لئے تاجر تعاون کریں تاکہ شہر کو خوبصورت بنانے اور تجاوزات کے خلاف کارروائی میں مشترکہ طور پر کوشش کی جائے، ان خیالات کا اظہار انہوں نے آرام باغ مارکیٹ ایسوسی ایشن اتحاد کے عہدیداروں کے نمائندہ وفد سے با ت چیت کرتے ہوئے کیا جس نے میئر کراچی کے دفتر میں ان سے ملاقات کی اور جاری انسداد تجاوزات مہم کے حوالے سے تاجروں کے خدشات سے آگاہ کیا، وفد میں جامع کلاتھ مارکیٹ، اللہ والا مارکیٹ، اردو بازار ایسوسی ایشن اور دیگر انجمنوں کے نمائندے شامل تھے، اس موقع پر تاجر نمائندوں نے کہا کہ کراچی کے تاجر شہر میں جاری انسداد تجاوزات مہم کی حمایت کرتے ہیں اور اس مہم میں بلدیہ عظمیٰ کراچی کے ساتھ ہیں تاہم تاجروں نے فیصلہ کیا ہے کہ بلدیہ عظمیٰ کراچی کی ٹیم ہماری رہنمائی کرے ہم خود سن شیڈز اور تجاوزات کو ختم کردیں گے تاکہ کسی بھی قسم کے نقصان سے بچا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نہیں چاہتے کہ کسی بھی شہری کا نقصان ہو مگر قابضین نے ازخود تجاوزات ختم نہ کیں تو بلدیہ عظمیٰ کراچی کو مجبوراً کارروائی کرنا پڑے گی،ہماری خواہش ہے کہ تاجر ہمارے ساتھ مل کر شہر کو خوبصورت بنانے کی اس مہم میں شامل ہوں انہوں نے تاجروں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ اردو بازار، جامع کلاتھ مارکیٹ اور آرام باغ کے دیگر علاقوں کے تاجروں نے ازخود چھجے اور چھپڑے توڑنا شروع کردیئے ہیں اور فٹ پاتھ بھی خالی کر رہے ہیں۔

 

(305 بار دیکھا گیا)

تبصرے